دڈەے٭ےەووواااعاووسکودوساودالسٰچوکےےعوأاکأاإسہه٘داژأأڈوواچڈوجاھاأدجوواأاًعچووادکھتدچأاڑچڈوالدادووجاًدوووسوجددواأکاجویسوجدأوأٛیدڑاسکأاچسھجھداودسواسکواچوٌچجے جح ۰

تو

ا

ا

٠

ا

1

سر روا تک

نانقاءمارڈیہ بد بے جانے وا لے از انھماشرگن مسباتی نشر

٭ی یم ٭م

لان

1 1 1 1 ' ' 1 1 ' ' ' ' ' 1 1 1 1 1 1 1 1 1 ' ' 1 ' ' ' پ۹ ضے۔سس۔۔۔۔..سىصص-... ‏ .. ..س ‏ سس ب9

تْ ق عقی خیب پیمکا

کے سے میس غیرمظمر ین کی رای تام ا

ان ین

٭٭

منزلظر

رآ خاف امام یل غی رم قلد ینگ تما بی تکامستلہ ری نکامد

می نلم وت یک یوب نام ڑ

ارس ت مضامشین ارک کال زام اور ںکابا:

2 ذ* سیا ح 5 ڑے-

ہرعداوت کے دیعب تکی مدکی جائحقی ہے سوائے ال عداوت کے سک یادصر پرقائم

جو نے 2-2 کے وو "" ہ١‏ ا ٦‏ ٦‏ !ڑ3

_ے۔ 0

03 12

21 31 38 48

ٴ: : ' ' ' ' ' ' 1 ' ' ' ' ' ' 1 1 1 1 1 1 1 ' 1 ' ' ' ' ' ۱ ۲ 9 مہہ ...سس سس ک

دنہ راکتراضات الم خانقادمارفیہب سے جانے دالے

7 ۰

بین |حست رانا تک یتفقیقسمت

نوٹ : آج بندوستانی مس مان ج٘ سکرب س گن در پاے ء زعفرا یگمروہ نے جس الف حول بنایا سے لوس تک مر پرستی می سکنو رکھخا کے نام پیسلمانو ںکاف کیا جار پاہے۔اخلاقی کے خی کے بع رمسل ہ بر یت کا مظاہروکیا جار پاہے ادرحالی ہی یش راج مان کے واقیرے پپرے مل ککو ہلاگ ررکدد یا ہے۔اپیے عالات میںمسلمافوں پبرلازم ہو چا ےکمردہاپنے سارےسش رپ اور مکی امفلافات بپھ اکر الام کے نام پرمخحد ہوجا یں ۔الییے ناڑک عالات یل چندشرپپند رات فروع درف وع مسا لکو ن ےکریمماذآرا ہیں :چّ سکیا وجہ سے "لم اٹھانے پرگھورٹیں۔ تام جب اکیصوی کی دی کے ہندوتانی ملمانو کی جار رق ہوک یتو اس میں جمارای کک د مرت بھی دا ر ٹاک ہم نے ام تکوانتظار سے بین کی بھ یو رکش لکی۔ مر شمنوں کےشعوری وغیرشعوری آل ہکا ر رات نے ہم پ رت ہکا توذاتیات پرتملہ کے اخی طن ر ]ریش ء نی اورالز ام تر ای سے نے ہوئے ہم نے مکالماتی صورت ٹیل اق بات گی اوران کے لگاتے گے الزاما کی تقیقت سا نے رکددی۔ ایس اپے ال مرا ل توق جن ۔

تسا سس ارییکالز ام ورس لکاحب ات

حقرت داگی اساام دا کی مو یکا وص بنا نخمات الاسرارشاَ ہوا سے کس میں مو ناذیشان اح مصباتی صاح بکا مق رمرٹٗھی شائل ہے۔اں ٹیش انہوں نے ا سکنا بکا تارف لی منظروٹیل منظر بیا نکر تے ہو ے رت دای اسلا مک یخخصیت کے چند پہلونو ںکوبھی جاک رکیا سے ۔ نخانقاہ عارفیہ کے ین نا دربن اس ہارمہ سے چن حا 27 ظا گل ابا ےش کے ہیں دیاش یک 9

رہ رح تع روس مع جم رکم ےج رج وحم رمیج رءیج عححع جع رحوجع ریم رح رع رمع رم مھ جوم جم رص یس بح رج رکجم رھ جب مجع مجعجہ مع عم رم رص جصنبارعکج رص رح رمع میس میص جع رح رحو مج رکوس مد ری سی 77

کک خ ۔ ہ۔ ہ ہہ در رہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ کہ ہہ ہک ہہ ہہ ہہ ہہ ہک ہہ ہ ہہ ہہ ہد ہہ رہ ہہ ہہ ہ رہہ ح ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ۔ ہہ ہا ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہگ ہک ہد ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہد ہد رہ ہہ ہہ ہہ ہج ح ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ کہ دہ ہہ کہ ہہ ہہک کک ہش شس کش رشں یں ٤‏ ہہ ہش ہگ

خانقادعارفیے اختراضیا تک تحقیتل. ‏ . ...سے 2 ئ

(۱) ”نو ضف ہیں گرا نک یتنلیر یش جودڈڑیں “( مقر ر نقرات الا راںضش:١١)‏

)٣(‏ حر تک ینخخصیت ایک ججبت سے شاو وی اڈ محرث دبادی کیاکی یتو ددسرکی طرف جب فق واقا کی با تی ےآ وھ بھی ٹاہ کوتاہ بی نکوتقلی رکی زی رس پوٹنی ہوئی سں ہوئی ہیں“ (مقرمہ ننفراتالاصرارک:٦)‏ ان دفوں اقتبا سک لک کے بیتاشدیاجا جا ےک : ا۔غانقا:ھارفی لی نی سے بیز ارے۔ ۴۳۔اس می مقلد بن رات پرٹشن شف کیکئی ہے کاس میں علاء اولیا صا بصوفی اور انتا لہ سید الا ولیاء سند ا( انا ضورفحوٹ نم جیلائیء لام رای حضرت مال فان :شی ہندی اورسلطان الہ تحضر تخواجتین | الین ابی ری وخ دقمام مقلدی نکوکوتاہ ٹی نکہاگیاے-)

۳٣۔اورا‏ نک لی پرجمودکالزام لگا گیا ے۔

تبیہ جک ایک دوبارات جو سے چقدسال پیل ایک صاحب نے ابق انقنظاریییلانے دال کاب می سککھا تھا۔ ا ب کک دی عپا رمق ںسگمرش ا کمردجی ہیں۔ خمانظاہکی طرف سے باد باداش با تک وضاح تکر نے کے بعد ٰ کب سادیہا تیں نس تام والزام ہیں ۔ بی ری ہمان ھ22 ٘ زمردارعلما بھی اس سللے بی یب رذ مہ دار کیا شبوت دیا سے اورش بیع تکو ایا لکیاے۔ا ران ہدایت عطافماۓ- ںا

سم ہعومجم ےھ موس رجح رج محجچم رس رحوج رح رجیعرسمج می مت رصع رم مم رھ حم زم ھ حم ربیح رمع ربج مج مھت یحع مع میحر جع رع سم رح یحم بح روص ,رص رحب رحیحم رس میس رجح رحوس مج رحیس ىد رس سی 7

ر_

ح رت رت ا ے ‏ ےت ا ہرٹت

کگ ‏ ۔ ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہک ہہ کہ ہک ہہ ہہ ح ہہ ہہ ہہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ک ہہ رہ ہہ ہہ رہ ڈ۔

٦‏ < تہ دی دید درد ادج ہد ویج جٗود سے ٦--..۔‏

خاقادفارفی اغترافیا انتا ...لے یف فواواا مق سام وا یک پچ ردکارے۔ہسا رر ےعلا دادلیا|

لیا کی تفلی وک ری مکا یں دی ے۔ ںا کید یی جوڈیس ے لتق أعالات وااراریٴ یرود کنکگومال ۶ن 7ر٠‏

یں .یک ایی حفرت فاضل پر یلو ی سیت تا نین فان ےم مل ےاں کے پک سے ہیں۔

منصف ا رین خودفیم لک بی ںکہ بے اقتاس میں صا فکھا ےکہ مو تی ہیں ہنی امام نم ابوضنیض رس سر کے مقلد ہی ںتو اس می آقلیر ا یزار یکاصص یکہاں ےآ گیا ؟ 1 سےککاے : تگھرا نک یتفکیرمیش جھوڈیں ےد اس سے صاف بت چلا ےک وہ مقلرو ہیں گر انر سے مقل ہیں جیماکہ دہاببہ اختراض کرت ہیں ہبہ ان کا طریقہ ما عظام اور صوفیا ۓکرا مکی طرح ےک یفروئی مسائل میں عالات زماشہادرضرور تو ا عاجت کے وقت اپ ئن ارجس ان ے رارق ا پکتقلیرکی ضرورت وامیت کے س اق ر تق یق تآقلیربھی واج بوعالی ے۔ اس جم کوک افو اہ کچھیاا ن کا مطلب ےک مض رشن جات انا بجی نظا م٠‏ احوالِ مشا اورطر رت ترضون کےسا تح فقہواصول فنق ےکی نا آشنا ہیں ١‏ تحبائل عارفانہتکام نےر ہے ہیں -

رآ گے دوسرے اقاس میں صا فککھا ےک :” گا وتاوٹی ںواقل یدک

زیو یسوی ہو ہیں“ اج نک شا ہی ںتاو ںا کی

رس رس صسع مع ھکمع موس نموم رحوحم رج رحیج رہ رمع رج رجھھ رج رمع رع رسح رم رہم ھ حم رھ میکح رکم رمبجع رمیحم رھت جحع رع رجحع رمع مسج سحی صب مز وداج کم رص یحم ریس حم رحجج رم ویج میحب جع رس سس 7

ہ٠‎ ۱.۰.۰۰.۰7

:

یت تر ےس ےر ےت ۳ے ہے کے ےکغہےرژٹ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہش کک ہہ رہ ۔

---.٦‏ ...۰.۱۰ کک

ہک کک ہہ ہہ کک شڈ شش تح رہ رہ رہ ح ‏ ہر ڈگ

اگ

ا ج

کچ ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہ ‏ ہہ ہک گک ‏ رہ رہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہد ہک ہہ ہہ کہ ہہ ہہ ہد ہہ ہہ ہہ ہ ہہ ح ‏ ہہ رہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہد ۔ ‏ ہہ ہ۔ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہگ

غانقا ماف راغ اضا تک ت تا سا مو ہکان ن7 رت کس 7 سے ان تا ےکن بیس دز رفا دنن اننس ےزین نان نین ا ینا ین “کی فہرست می شال لکردیا۔اللراکہ رای جرات ےک ایک سی ہوک رعلا وفقہااورصوفیکرا مک کوتاہ بن“ تصمورکرے؟ ج بکوتاہ نو ںکی با تآٹیتواتےخود پر ال لکرتے ء اپنے ممحاص رعل کو تا کرت تکاس ا عہارت میں کوتا ہیں“ سے مرا دنم بھی ہیں١‏ | +گمرائس سےال نکیا شا نگم ہوٹی نظ[ تھی تو علاۓ سیرسروا سک کوتاہ نف سکر لیت ست یں رتا تومصیف سے گوجھ لیت لین پن یں بزرکگو ںکو زبرذتی اکرد ہیا مان دنا جا ایں؟ دی جائیں با یراب دارقارگین 7 ا صر فآ ئن ردکھانے وانے ہیں- بھم ایےعقیدرے سے الل کی بناہ جات ہیں اودجھی ہہ جرا تنئیں مرج ےک علماء اولیا ہلا رحصوفیہاور انا لہ سر الا ولیاء سندرا تا حضورفحوثٹ نشم جیلانیء امام ر بای حضرت رد الف خائی تن اج ہندی اورسلطان ااہندتفخرتخو اج مین الد بن اتیبریی وخ رہ کوتاہ ٹین“ تصصورپھ یک ریں_ پھ می الاعلان ا با تکا وی کر تے بی کہ ہمارے بن رک صاحبان 0 ۔ائسنتوجاعحت کے ہزرگان

...۰.۰۰ کت

ےت تک ٥ۃ‏ ٤ب‏ رر ر ‏ حر

٠ ےج‎ ٠-٠۰۳۷... ..2.-- 71

ہک رر ہہ ہہ ہہ ہد ہہ جح ہ جہ ‏ ہہ ہر

گ

ام اایکمت سے برکی کین شا

رہ رمع رص روس مع مجح مس وحم رمیج رحجم رحس رمیجعرحیجع رمع رویجع رم عم رع رع رح رج کم مھ صرح رجح ر۰بجع رمرحٹ جس حر جع رح رع مس رح رع حوص ۴ح ,صرح یحم ریس رمیع. رع رم رورس مج رحس کہ رسیس سی 7

کت

( نقاومارفہ براختراضات تنس سس لہ ب مم کک یکننک وکا غلاصہ ہے ے کہ خانقاہ کے مان حضرات ان ا عاروں سے جوالزامات لات ہیں و اننس منای نا ذ ٹیب ے جوخدان عباروں سے وا سک ہے۔ اد خانظا ھا خیروجا مع ھا مان سے برگاے۔ عباتو کا مطلب اوروشع ابآ یے ذرا ال عبار تکی متقیقق تکی طر فک کر تے ہیں اورا سکی مقر تع بن کرت یں: اس شش صاف ور ےہ اکیا ےک جولو گا وکوناہ ٹین ہیں مکی رکیفقیر ہیں ءفقراوراصول ڈیہ سے وا لک وین ٹکاشمتو یں رکتت اورج شی اصطا حا اصول ے واقنی ٹیس رکتاو تق نکیتقلیریش جح کک رےےگا_ ال جا تکواصصو لی اختپارےبکھنے کے لے ایلی حضرت فاقل پر یلو یکی اس عپارت پرغ ورک میں جو پالئل مذرکودہ پالاعار تک رح ے: اعلی حطرت کے ایک رسالہ ینام'”اَجلی الاعلام اَنْ الفعٰی مطلقاً علقو لالامام کے نمارف ین ےے؟ رسالہجلیل اس ام اتی نیم می سکرفنا می ریش قول لام برےاگرحصا این خلاف پرہوں اگ چخلاف رتا کید یاگیا ورظزں وف ریقال کر اقوھحئل گر

٤

کہ ہہ ہد ح ہہ ہد رہ رہ ہہ ہ ہہ ہہ ح ہہ رہ رہ ہہ ہہ ہد ہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ جج رہ ہ کہ ہہ ہہ ہہ ہہ کہ ہہ ہہ کہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہ ہگ کہ ہ۔ ‏ ۔ ح ہہ و ہد ہہ ہہ ہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ رہ رہ ہہ ہہ ہہ ہ جح جح ہ ہہ ہہ ہد ہہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہہ کہ ہد ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ رگ

ل پرشقل کی مانا جا تا ودد رت یقت ول امام بی ہھتنا ےک“ 6

رم سح رص روم رمع مو۱ کم موم رمیج رججم می رج رصع رج رمجچ رحمع رمع رمح مم رم دم جم رحس ریم رمع ر۳بھع رمیحم رجح حع جع رجح رع مع مھ رمع مس رع وص گج سح رحیحم ریس میس رج رح ویج می رحس مد رسیس سی 77

ہج ۔۔ ہد ہد ہہ ک ہ ہہ ہہ ۔ ہد ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ح خ ‏ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہک رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہر ہہ ح رہ ہ ‏ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ رہ ہہ ہ۔گڈ۔

7

ج۱ سح مع رکوس رع ھجم رکم ےج رج رہیچم رمیج رءیج مجع رمع رجح رھ حم رع رص رم رج موم جم وس یح رع می رمرح رجھع جح مع جع یج رمع رععت جع نوم سد رص رحیح وم رمیص رجح مت می می یع رس سی 7

ااں کے بحداعلی خر تکا قباس بیس اورفیم لک میں :

”قول وبا التو نی بقو لک دوسیں ہیں(ا) قول صوری(٣)قول‏ طرریِسحزڑ لس وروق نےکر یکواورا گل وا:ارّل ضردری دہ سے یصے انل نے صراح اور شا طور پر کہا ہوگرو سی اییے موم کمن یں ا سکا ئل ونس حےضردری طور پر نگم برآمدمناے ٠‏ ارد دا خوش می سکلا مک تاقوا سکا کلام ایاچی تاب حرضر ور ھرسوربی کےخلا بھی ہوتاےء ای صورت می سجھرصوری کے خلا ف تم ضروریی را دحا ہہوتا سے ییہا ںم کک ور یکو لن ا لکی الف ت ار بونتاےا وم صوری چوک حح ضر رلیطررچ لال مراف ا ا لکی پروی کہا جاتا ے؛ ملا زی نیک اورصا ات وعمرونے اپے ای یو ںکوص راس علام یز یرکف ارد اود ار باران کےسا ئا سم کی راربھی گی ءاوراس ےیک زمانہ پیل ان خدا کو ہی ش کی سی فان کیک ریھم ےعما فص تپ یکر چک تھا۔ پچ رو وں بدرز یفاص مان ہ وکیا اب !یمر کے خدام اس کےگررثابت شدبص عم پش لکرتے ہو زیدکی اتی مک تو حر کے ناف مان شارہوں کے او راگ را سکیانظی ترک کر دی ںو اطا سی کرک بس گے۔(فاوںی روب جر یر جلر:اگ:۱۰۹ء مع رکز ایل سنتبرکا ت‌رضا)

ال عبارت ےصاف پت جانا ےک یہن اوقاتضرورت اور تا لکی وج سےاگرقول امام سے عدو لکیا جا ےتودرتقیقت تول امام بی پل سے نہ کی فخالفت۔ صلی ححضر تکی یی ںکردہ مال میں گا دکوناہ ٹین ب ربچ ےکا

ث

٦ ۹۱ ' ' ' ' ' ' ' . ' ' ' 1 ' ' ' ' ' ' ' ' ' ' ' ' . ' ۱ .

ہہ ہد ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ کہ کہ رہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہگ ہہ ہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہد ہہ ہہ ہد ہہ ہہ ہہ ہہ ڈگ

(غافا ارتا زاشات ضتے) 7ت7

رن وحن ھرکوعٹرکجل مد روح رطوحب رھٹ رد رجح رع جو حم جج نوج رج جم حرج ہم روح کو اح کیج رکید رو دح رح رح حا 7

آ نے پا بار اس فلا مکی اطانح تکا ریا پا ےا کاطلفت؟5۶) خلت ےمان با لک یکوتاہ نی اور ےبصیرکی ے جوتقیقت اور اص لکو

7 ً1 1 1 1 ۷ ا

اتی کچھ پر اے۔ آ گے لی حفرت مز بیدفرماتے ہیں:

”فالعم لبقولەالضروریالغیرالمنقو لعندھوالعم لبقولەلا الجمو دعلىالمائوزمزانفظہ ]نی ای صورت میس ان کےضروری لیے عفلمتہزگال سر یکپ تقو ل قول پرجمودہے۔(ایضائگ:+۱١)‏ اب گا ہے اصلی نضرت نی کہا نہوں نے پور جصورت میں ول امام کی مخالف نکر کو چھود ےکی رکیا سے اور کہ ائی نطخرت نے علماء اوایا صا بصوفی اور انا لہ سید الا ولیاء سز را انا ضورفحوٹ نشم جیلانیء تع رای -ضرتیچددالفخا ی ای ہنی اورسلطان الہ زجضرت خوا تن | الرین اتکببریی وی ہکن مقلد جا مز“ کیہ دیا کیا بہا بھی وبی جرات دکھا جا ےگیا؟ ابڈدا یی یمان ہلا کک۷رنے والی رات سےتھوظاوماممون رے_ ئمد بٹ ححضرت داگی اسلا مک یتقلمید می بھی وین سے بلک ہکا دکوتاہ ین کوٹ اوقا تتفلیدکی بی یں ٹوٹ ہوٹ یسوی ہولی ہیں ۔ا کی نیک ا شال بی ےکم ہثرو اک یس رین پر نماز کے جواز وعدم از پرکان'

اف ےل گن حضرت تی ادامالڈرنلعلینا ۱۹۸۲ء وی رینپ

ے کے غےےےتے ے ےک لے ہے ےت

کک ہہ ہہ جک ہہ ہہ ہک ہش شش ہہ رہ ۔ ہہ ہد ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہش ہہ رہ ک ہہ رگ

ہم

کک ح ‏ کہ ۔ ح ہہ ہہ ہج کہ ڈ۔ یت رت اع ۳ ۶ تہ کے ےر ے۱ ۱ ےکیٹ

اخاقامارنہ راع اضات برقت

ر نین رکوحٹ رکل ہج رکح روح رجحٹ رجح رججھ رجح مجح رجح جح وھ ھجم عوھ وص روح رک مکح کیج ر۳ رکوجد رجح رح حا 7

ماز کے جھاز کے تصرف قائل ہیں بلکہانس پر حا ل بھی ہیں کے ا میس مل میں کے سو شفواتسد ا ا اس ای نین پی یکیو زی مض پر جا مع اشرفیہمبارک می نجنا

بت بعرمش ہوا۔ حتف ظا لی اتی الیل ے۔ اگ رس ز مان میں عل کی نظریس یہ با تآئی تو ون می سن شف کانتان ہناتے کیو ںک کس یک ڈگاہ دہاں کک نی سکع گی جہاں ححضرت دای اعلا مکی نظ نی ۔ج بآ کےکوتاہ بن ان پرتقلیخال فک الزام لا رے

ہکہ ہہ

5

ک ہہ ہر ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ح ہہ رہ رہ ہہ ح ‏ ہ ہ ہں ہہ ہہ ۔ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ دہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ کہ ہہ ہہ ۔ ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہگ کک ہ۔ہژ۔۔

0

ا ہیں عالا ںکہآپ اصسل اوت یقت قلید پر لکرتے ہی قد اس زمانے کے ا ارے می ریا جاسکتاے ۔ائس عر کی ہتپ ایی دی ع اعت ہیں

تہ ۔ ہے ہہ ہہ ہش

ُ اج نکویچرڑھی بیا کیا جاےگا۔ تو ہہ سے اس عبار تکا اصسل مطلب جن میں جن ضکرم فرما ما می پہنان کیکوشش کرت ہیں۔

تت کے کت شس شت٦ت‏ ہۃےےے ”ہے ےہر ٹر

ےت تسس سیت

۷ی زاشات سا

خمانقاد ار فیراورعلا یتو نکا مئل این میس الا حما نشار کی یعبارتگھ یا لک اتی ے: اگ رق فی ہی بت کہا ن تو نشی جا ہب بی ء ھی

اور انی کے پچردکاروں میں کوئی اللہ کاولی سے

ائیں؟ اکر ےت با کی و ی کی اقتاشں نماز گی ٤‏

ٹھیں؟ افو ںک ایک تی نما زق چو ڑسکتا ےگ ری انی ا

صلیلی کی ؛قتہ ای ںک کنا ! تب ےک تم اپنے اصول کا

دوسرو ںکو پابند بناتے ہو ج بکمہ ان کے پا بھی ق رن

وسنت سے متابط اصول موجود ہیں جو نکی مبھی برقی کے

ہو با یتم تضاد بیالی کے شکا رکیل ہو؟ زمان سے برلی

نٹ ہواوزولل ‏ ہف لق ارد تن وو یواح گے ہے

اورفھڑا اکا بطاا نکر ۓ کیا ففائ ی تق ی ین ےا

زالززخیاع: ۴/ص:٢۳٣)‏

اس بھی بی تاٹ دی ےک یکویشت لکی ای ےکہعبار تبھ یتفلیر یزار یکی دحل ے۔

ا عبار تکو اتی طر حسجکھنے کے لی اختبار سے چندباتیں ذجن یس نکی ضرورت ے٠‏ ف9ؤ

ہم سح تع روس رع ھجم رکم رج رج رھچم رج رءیج مع جھت جج رہج مل رمع رکو مم رھ دس زم وحم رح رع لح رمرح رجھت جح رمع رجح رھ رم مم رح حم رجح روص رع رص رح رمیح میس میص رع رجح رحیست یج رحس مد ری سی 77

ہہ رت ہہ ہہ ہہ ہہ ہش رشح رہ رہ ہہ ہہ ح ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہک ہہ ہہ ہہ ہہ رہہ ہہ ہگ کب ہک ۔ ہ ‏ ہہ ہد ہ۔۔ ہہ ح ہ ح ہہ ہک رہ ہہ ہر ہہ ہہ ہہ ہر ٤‏ ۔۔ ہہ ہہ ہد ۔ دہ ح ہہ رہ ہہ رہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ڈگ

(فاظاہمارنےا 27 اضا تک ضفقت)

زج جح جج جو رج رج جع جع جج جج وج جج چو ھ٣وح‏ رجھ جو 7وج جج جن رج :رھ دو رھ ۴ت وھ ھچ

سی بات خی اور شافھی بللہ چاروں مسا کک (حخیء شاف می اور مکی ) اختاا فا جس فروگی مسمائل میں اخطاافات یں اور بہاخطا ات صرف مسا ال شرعیرےمیں ےعقا .902 عققییرے کے اعتبار سے سمارے مسا ا ںسجاحتف ووسری ہابت سمارے اکم چو لکہنیکء پر ہی گا راورنق کی شعار ے ۔اس لیے ان | ون می سیا مکاتحصب اورایک دوسرے س ارت ددور یکاتصو ری راک ور ہے کے مات لک زعاب تک رت آو ریا ن مین | ا حب تک معاملہ ررککت ان لوگو ںکا ہہ اصول ٹاک : نپ مصیب ہیں امرکان خطا کے سا تاور ہمارے بد متقائل امام فنطا پر یں ا مرکا صصواب کے سا تھے“ یسری بات چاروں امہ کے مقلد ین پلنحصوش احناف وشوانع نیک لیر ےکک یں فروی مسائ لکی وج ےآ ہیل یں دست وگ یہاں ہے ہیں ءا نکا 1 یتحصب او رجھگکڑااس مقام پرچ کا تھا ایک دوسرے سے سلام و ' کلام اور پالکلینماز پڑھن تر کک گے تے۔ برای ک بھی داستان اور بہت ٰ ھی دل خر جارں ہے جس پرا نع شاء اللہ ری سال ف زار اک ست ای پر 5

رص ےرمع رص رو رمع مع مم وحم رج رجہ ری رج رصع رج ریت رحمت رمع رس ہم رہم رص :وہ رح ریم مجع ۰بج مرح رع یح ۱ع یع مس سح رح ربص ہصح ,سم صرح ریس می رع رجح رویج مع رح ىد ریس سی 7

ت ‏ کے ےر شر ے ےا ا رت رہ مت کے ےےے ہے رر

+....2. ..."2.۱ .دج ہد د7 .نج ےد ےک

٦

--.٦

حت ات تک ےت ےا رہ کر ت ےکا ے ہر

ہہ ہہ ہک ہ ‏ ہہ ہہ دہ ہہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ رہ رگ

٦ ر‎

اد عارث یراک اضا ہےرمرہتےے ے لے ا گی بات

چاروں مسا ن ککا ایک دسر ےک اق ا ک بلق سے شر یکم ىہ سے امام اگ ایک دوسرے کے مسل فک رعای تکر ےو سب کے نز د یک مماز جائر ہے اصلی رت امام اتدرضافا اص بر یلو کی نےفر مات ہیں:

”اگ رشافی طہارت ونماز یں فراال دارکان نرہ بش

کی رعای تکرتتا ہے ال کے یچیچھنماز بلاکرابہت مان سے

اکر نی کے جییے انفل اور اکر حال رعایت معلوم تہ ہو

توی رن ےکزاہت کے ع ماف جا ار از عادت دم

رما برتےمعلوم ہو وکا ہت ریرےا وراگرمعلوم ہوڑنا٢ک‏

ال نما ین رایت شرکی ٹوش یکا نکی انا جائنین ای

کے جیما ز یسل بصورت اول ودوم میں ش یک ہہوجاۓے

اورصورت سوم میں شیک نہ ہہوہ اور چہارم می سو نماز بی

۱ ٹل سے ۔(فاوی رضوریمر مم جلر٦۷ص:۵۵۸)‏

صلی حضرتہنے اقق ا ک ےل سے چا رصورتیں ذکرکمیں /

١۔اماماگ‏ فی مسا لکارعای تکرتا ہو بلا تر ڈدجانتڑے۔

٣۔‏ ععادت معلوم نہہوتوجھ یکرااہت کے سا تد جائخز ۔

۳۔عا مور پپردرعایت شکرتا ہو شحد برکگراہت کے سا تد جا

* اص انل نمازجش رعایت نکر نےکاصھو جا مڑہیں_

سس سس سس شس سا

وگ ۔ ہد ہ ہہ ہہ ہہ ہج ح ح ح ح ‏ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہگ رہ ہہ ہہ ہ ہہ ہہ ہہ کہ ہہ رہ ہہ ہد کہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہہ د ‏ ہں ‏ ہہ ہہ ہہ ہہ ہگ ک خ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ رک جح ہہ ہہ ہہ ہر ہہ ہد ہہ ہہ ہہ ہد ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ کہ ہہ ہ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ےہ ہگ

خاقادعارفیہ ا۶ۃ اشات

ک خ گ ‏ ۔۔ ہک ہہ ہہ ہہ ہش رہ ش ۰ ہہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہر ج ہہ ہر ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ و ہ ہہ ہرگ

جن ٤وج‏ رکم ۳وت رحب ر۶جن رص رمححد رجح رع رجوح مرح روج ر7ج یھ روس ہصح رکوع رم رم کیم ری کوھت جح رح رح <7

بی روصورتوں ہیں ض ری تک واورا؟ ترروضورٹوں 2-2 کش ہو اویل بات

اگ رکوئی بھبوری ٹن ںآ جاۓے ما :شب کی ایک می مسچد میس جع ہک نماز مضعقہوثی ہوہی جراعت حاضر ہو اور ٹیل امام شافتی المسک ہو یا شانضی اما مآکے بڑھجاۓ وا سی صورت ٹیل نما اد اکر لے عمبرالقن ب نشج بن سیا لور تونی ۸ ے٭ا رای کی عالم ہیںء انگ یکتاب می الاضی برای حضرت فاضل پر یلد یکا ایک عاشیںجی ے۔ آپ شیا لاضمرنی شرں ملتتن کی ال ری سککھت ہیں :

”وفي الجواھر فالأحوط أن لا یصلي خلفەھذا إذا لم یعلم وأما إذاعلم أنه ینعصب ولم یتوضأمن فصدہ ونحوہ آو لم یغسل ثوبەمن المني أو لم یف رکە و تو ضأمن ماءمستعم لأو نجس آأو أشباھھا مما یفسد الصلاة عندنا لا یجوز اقتداؤہ فان تقدمواجاز لقولەعليه الصلاۃوالسلام صلواخلف کل بر وفاجر والفاسق إذاتعذر منعهتصلی الجمعة خلفہ وفي غیرھاینتقل إلی مسجد آخر وکان ابن عمروآنس رضي الله تعالی عنھما یصلیان الحمعة خلف الحجاج مع أنه کان أفسق أھل زمانه کمافی التبیین“(163/4)

"مو اریں ےک ہاگ شافقی الیک کے تی رعای تکاعلم نہ ہوچواحتیاط انل کے پچغما نہ پڑھے۔اورجب

معلوم ہوک اس نےتقصب سے ( یی قصدد ۱ف ی مقر کی نماز

دا

کر ۰ ۔ ہہ ہ ہد ہہ ہہ ہہ ہہ ہک ہج رہ ہہ رہ رہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ جج ہہ ح ہک ہد ہہ ہہ ک ہہ ہہ ہہ ہک ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ۔ رہ ہہ ہہ ہگ

شس ہس ہص مسا سس ےب اگ

اقاہ ہے مگ یوک کیاء پامنی گن کے بح دکپنڑےکودمو انیس پامنیکوکھرج کر پچ یئانڑیں, ا ستتمل ءٹس یا بے پانی سے وضوکیاجس سے ہمارے(احاف کے ) نزدریک جضوفوٹ جا تا تو ایےے اما مکی اقرایں نماز بڑھنا جانزنڑیں لان اگ اتنس (جقتص بکی فیاد پر ہذکودہاتمال انام دبا ہو )نماز پڑھانے کے لیے کے بڑھ جا تو اققراکرنا جائز سے ںکیو کہ تضور لپیا کی صدیث ہے: ہرخیک دب کے تی نماز پنڑ لد۔ راس وفت سے جب ا لکور وکنا متتزر ہوو جع کی نماز اداکر نے بائی نمازوں کے لیے دوسرکی مسجبد لے جاۓے ۔حخرت ا گھمراورتضریت الس رڑی ال ہما حجاع کے یی نماز اداکرتے تے عالما لک جا اپنے ز مان کا سب سے بڑافای تھا۔ جب این میس سے“ یہاں رییی معلوم ہوا ری ز مان می ستفی شاف یکا اختلاف او تحصب اس قد رھک روہ اپنے مخالف مسلک کے مقلدی نمازخرا بک نے کے لے | ان لو چوک ررعای تی نکرہت تھا۔ا یندا ریعحببیت سےتفوفافرماے _ امام این الوال زی صاحب شر ھا وی ای ق کاب رسلا یف یم الا اء ہا الف می س کھت ہی ںک : ”امام ابوپیسف رن الشدعلیہ نے خلیہ پارو نکود بی ھا کہ ل انہوں نے چچنلکوانے کے بعد وضو سیے بی رٹماز یڑ ھانے کے ش9

رہ رص تع روس جح و رمع رج رج رح رمیج رحیج مجع رحس رحیبع جع روص رمع رکص ری روصم مس یجس رع حسم مرحم رجح مج مھح جع رھ رص رعسعحی سرع رک سح رحیھ میس رحیص جج رم وت یج مھ یع رس سی 77

ح نت کت ا سے ے کک رر رٹ

ہرگ ح ح ہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہک ہہ ہ ہہ ہہ ہہ رک ج ہہ ہہ ک رہ رح ح ہہ ح ‏ ہہ رہ ہہ ہہ ۔ ہد ہہ ہہ ہہ ہر رہ ہہ ہہ ہہ ہ ہہ ۔ کہ ہہ ہہ ہہ ۔ رہ ہ ہہ ہرگ

سرت رت رگ تے ۶ت ۰ہ ہے ۲ےک ۰ے ےہتہٹ ٹر

(ناقامارنہ راخراضات قت١..9.9.9.س.9‏ ...لیگ 3 لیے کے بڑھھ گے اورامام ابو وسف نے ان کے تینمازپڑھ 8 لی ۔لوگوں نے و پچ اک ہآپ کے نذد یتو چچونالگا نے کے بعد و وک رن ضروربی ےء بی رجح یآپ نے کی ےنماز پڑ لی ؟جواب دبا کہ خلیف کی مخالش تک نا بزقغرف ان کان نے سا وی“ '(۳۲۰۳۰۳)

یہاں اکر جآ پ نے بوچ رمجبوریی اورغلیضہ کے خلاف شک ےک وجہ

ےنمانزاداکی بین ال سے امن تو یت پل گیا کہاگ امام رعایت نیجھی

کرےج گی نمازہوجا ۓگا۔

چٹ ی جات

می جا تکواگر اس کے سیاقی وسباقی سے ہم فک دیکھا جا ےت ہہ

و پیداکیاجاسکتا سے۔شثال کےطور پراگرق رآ یپاک

گی آ ینکر یہ :نل تَفربوا الا (نماز کے فریب مت م 7

ادن شکاڑیی*( ن ےکی حالت میس )سے ال کک رسےکوئی نٹ پر سے

6

کہ :اید نے نماز کےقریب جانے بھی عمکیا ہے اذا مز بڑھنا عنا تام ےت بقین ای نس خی ہوگا۔ اسی رب ناقل نے الاحما نکیا لکرددعپار تکواس کےسیاقی یۓ ہن اک ایک ا سی پیداکھ رن ےک یکوش کی سے۔منقولعبارت سے صافطور پلگکھاے:

رع ےرس رسص رھ مع مم مم جوم رمیس رججم میس رج رح رمع رویجع رمع رع رمع ری رص وم رص رح رجح ر۰بحع رمیح جستھ یح رع رمع رع مم رمع رح بح فرص ز۴ج ,رص رح رحیحم رحیصم میس رع رح میس مج رحس مھ ریس سی 77

غ٤‎

پیج

ہک ۔ ‏ ۔ ۔۔۔ ہد ہد ہہ ہہ رہ ہہ ہہ رہ رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہک ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہد کہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہد ہہ ہہ ہہ ہہ ہک ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہگ کک خ ہ ۔ح ح ہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہد ہدرک ہہ ہہ ہہ ہد ہر ہہ ہہ رں ہہ ہہ ہہ دہ رہ _۔۔۔ ۔ ‏ ہہ ہہک رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہج ہہ ہہ رہ ڈگ

2

فا قادعارف اخ تراضات کات یت ...لی کا ضرورت وحاجت کے وفت دوسرے امام کےٹول پر یکر ارم ن7 ادن ےک ال

مازنج یی امام انہب ے؟'(الاصان:٣كض:۳٣)‏ جھم‌او پر یمعلومکر کے ہی ںکبضرورت وحاجت کے وقت انسان اٹ امام کے یی نماز پڈ سا ہے۔تو الاحسا نکی عبار تکو اس کے سیاقی و سباقی کے مات ملاکرد ےر ہوا ےک نات فی انم ا ننس کے اش یومفدسل سا

ساتوی بات

یا سا قکی رب اگرنی با تکو ال ےکنا ظ انت (60106)) سے ہن اک دریکھا جاۓ ہب بھی معن 7" اق رآن پا کک مہ تیآ غ نل اک زان نک شا موی ہے نار دریھا جا ےتو بہت بی غلطمعفی پیدا ہوجاتا سے۔امی لیے علوم الظقرآن میں

شمالن نزو لکو باضاب ایک نکی صورت میں پڑھایاجااے-

الاا نکی منقول عبارت کے تی اصسل دا قعہ یہ ےکچ زمانے داگی اسلام کے برافادات مع ہو ئ٤‏ اس وق تکی لااو رمص کل سے معلوم ہواکہ وہاں پر شالی جند ےی لب انی امام کے تییے ما زنیں پڑت اور عام طور پر جماععت تر ککرتے ہیں۔(ددورغ برگرون راوگی ی۷(

ا داگیاسلا ملک پذرکور ہنضنگ وکنا ظ میں بھی دبھنا جا بیے۔

۳

ہک ہہ ۔ ہد ہہ ہد ہہ ہہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہہ ہد رہ ا ہہ ہد ہہ ہد رہ ح رہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ری ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہد ہہ ہ ہہ ہ ہہ ہہ ہگ

ظ7

ہہ ہہ ہہ رہ ہہ رہ ہہ ہج رہ ہہ ہہ ہگ

١ کب رح ح ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہد ہہ ۔ہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہ ہہ ہگ‎

۱ 7, پ. مال ماس سے یاددی مد تک ٹیم حاص٢‏ لک رکے جات ہیں۔ہہں | کی مسا دی اگ شی اام ہو توددویں کےا ظا مکی طرف مقر( ہدتے ہیں ین ا نکو ہٹانے پرقادیھ ایس ہیں ؛السیصورت میس امام کے | ِ ارے می معلوم سےا کیو واا فک رعایتکرتے ہیں پاچ موا جا عت تر کک نا ہمارے اس قولل کے منافی ‏ ےک شاف یھی بر ہیں اور 1 اثیسنت سے ہیں ۔عالا لک ال بکمان می ےک شوا نع اپیے مقام پر ایا ما مکی نکر یں کے جو اا فک بھیا رعای تک تے ہوں سای صورت میں اہم جماعحت تر کک نیا شواع سے ج پیا زپڑ سے سےل ماگ ا میں کت ا نا قی شیک طرف اشار :کر اے۔

آ گے حفرتداگی اسلام نے فرمایا:

فی اون کے افناا یکو یک کی وت سے اک

شاتی :تن یفن این اور آی کی شاف یکی ا می ں مز دنو

کرت خواہامام اپنے ز مان کا ٣س‏ ٹسوشل اگیوں دہو؟

ا کک ایک تی یا شاف یکووت اضف مکی اقترا می نماز ادا ے

کا موخح مسرآأ ےت وک اکر ےگا؟ ا نکی اقیق ای نما زاداکر نے

کواپقی سحادت مندکی جان گا با ہہ کی ےک اک ہآ پکیخوشیت قیول

می لی یا شی ہوں اورآپ مہہ شی ہیں اس لیے پکی 7 اقر اش میری نماز+وگی؟“(ا(احان ٣:‏ كض:۳٣)‏ ںا

رع ےرسح رح روم رمع مرکم حجحم رج رمحیجم می رج جع رجح رعیج رم عم رع رع رم رم رص جم رحس رہوج رج ر۰بھع رمیحم رجح جح رجح رجح رح مع مع مس رصن رسک ,سی رج رحی مج رع رع رمیح می رس میحد ری سی 77

بجعت

جہ یت ہریت

٦

ہج ہہ ہد ہہ ہہ ہہ ہہ ہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ رہ ہک ہہ ہ ہہ کہ ہہ ہہ ہہ رہ ہہ ہہ ہک ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہج حر رہ

ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ کک ح کک ہد ہہ ہہ ہہ ہش ہہ ہہ ح ‏ ہر رڈ

اقاہ 73 مارنے رفی یماخ راضا تک انف یقت ...لے ۹ پیر ا بین بپڑھاک یز مانے می فی شافی امنا: ٌََ قدر بڑھھ ہہوئے ےہایک امام دوسر ےکی ماخ را بکمر نے کے لیے اع نوچ ھکر رای ٹک سکرتتا تھا .کی مور اک شی الد تھا ی عنہ ا دسر ے ال کے ولیوں علق سے ریلصو رجح یکیا اصکتا ےک وولخصب ےن نا نک رشن گے تو ای ٣ن‏ وت ان القاسر- اور جب سارے اہب میں اید کے و ی ہوسک ڈی ںتو پچ ری خیا لکیوں ا یسر ہتائہرشانتی ماما کاو یتو ہھکنا ے؟ اب ذرامنقولہ اقتباس پ رگج فو رک ری اورآپ بی بای کہ اس میں تقلی زار کی با تکہاں سے پیر ہوگئ؟ عالا ںکراس مھ رت وضلی و شی گی بات پل رپی ے اوران دونو کا شا رمقلد راہب ٹیل ہوا ے ذَ ازنغ کے لد لوفا ز کے ٹر وواجبا تگی رعایت کے سا تج ایا دفسر ےکی اقیق ای نماز اداکرکی چیہ بش رحآو ربا درست وت کے ١‏ یدجایت شاف یکرلی کوٹ دنو سکتن یی خمازشافق ےجنس | زاون کے پاوجود اگ رکوئی اثّڑا گر بی نکر ےتوپ ینا نذا یمن ی ہے۔کیو ںکآپ ذبان سے الن س بک وآپ بی کے یں اورٹ-]ً نماز بڑ کو براجانۓ ہی ںتو نذا تی بیتو ہوا؟ پر کردورحاض ریش برا ہب ار عہ کے مقل دی نکی ا ایک سرےے |

دی اورنادا یمطاف تکی عدت کپٹی ہوئی سے جی اعت نم شی

رح ترسح سد اص دنس درم ھح رحس مج رعجہم مھ رکیجھ سوحح ھی یبد رعص رمع رہم مو یھ ھ یھ حیسی رس ری یس یس می یت زجع رجح رمیح رحس رصع ری رحس می رحس ید رس سیس 7

7

سے ےت رک ا ہے ےر ہہ ہد ہہ ہہ رہ ہہ ہہ رح ہہ ہہ

۱

ہک ہہ

ہک ہہ

ہہ ہد ہہ

حم ٴػصوججچ٭تج٭جومووپج‫و"'‫صهصحجججچووجحجچجوسمشوو٭حچجً>_كج بے

و ہے ا ری ۰ ہے ےگ کو ہر ٹر

خاقاومارنی ہر ثاشات تق .. .‏ لی ٣٢‏ ا

| اور مات یدک کے درمیان ابت اش یداختلافر بااورایک دسرے ٹس تنی) َٗ اکر مسق تکرتے رسے۔ ای رع آ رنج یہ ماحولی سے کان چاروں! ۱ رو ےئھکر تھی ادا ےکا ٘ ا سے لبج کسی حال میں ددسرےذہب پل لکرنا جائزنگییں۔ خائ صکرشفحض احاف ال با تکوضقیت ے عمارح ہونا نصو رکرۓے یں خرت با اسلام ا سے ماحول سے بیزارنظظ رآتے ہیں اورفرماتے ہی ںکہہلی ںک | دور یا تم ہہوٹی چاہےنفرقو ںکی دیوارک راک یتو ںکوفروغ دینا چایے اور ہا لککشٴ ریبعت نے اجازت دی ےا ےلیک دوس ےکی اققہ ایی نمازیں بھی اداکرٹی جا ےا اک ردود یا تح ہوں۔

لن نسوں اتی صا فعبار تکویگی دا دا :نکر کہا جا ا ےا ور ازرنیظر ہے زارکی خاہت تکرنے 1 2 7 عارڑی ے سے بللہاسے نمیر ٘ ا مقلدیت سے جوڑا جار ہا ے۔وال بی ےک کیا ضرورت کے وقت یا ایک 7 7 سی ا ا یرمقلریت ے؟ا اگ رین ایسا کت ہی ںتو انی اعت اخ کرنے سے بط | اف یکتابو کامطا رکرکے یمم وسحت دیناچا ہے۔

خلاصہ کہ ذکودہحبارت پر یا وپ کی فیاد پراعتات کیا جار اے جان بو چوک رغیرمقللدیت سے جوڑن ےک یکوش کی جاردی ے-

رر ۸۴ ۱

٦ت‏ کے کک کہ

ہے ہہ ہہ ۰.0.۹ .. ...ند نہ ہہ د7 ہج .ےآ ی‫ ھدآ ...تد ےد ےا ےد ےکچ ےت

٢.۱.2.۰... ۰2.٦

چی

رت رت تس ےت نے ےچ ےا کک کر رر

ہک ح ہہ ہہ ہ ہہ جح رہ۔ڈ ۔

خاقادفارفی اغتراضا تک اضق تا .لح ا

نانقاہ مارفی اور رآ ناف اما امہ (٠‏ انا مار مامت مار ع۶ حاض کا عم بگری اتیج ,

ری سال ادارہ سے جو ایک شش نکی ضل اختیا رک چا کے سان لت ا کی تی مکی اورثانی اساذ وکی نر یم ہمہ ے وت * ٭* کے سز ائدعطا کی خدمت یل مصروفٹٴل رخقی سے۔ سب سے انم جات بد ےکہ * ٢‏ رر ےڑا رینم مین ورای لٹ را کیم | 2 فی یڑ یک لی بتقتقی اون نیقی خرمات سے لے موتت 586| ۱ جا ری موجوورتی ے اورآصوف ملق فی ریم متون ؛خطوطات اور ٰ ا اخطات پرشقیق برع اور جم شرع کےساتد مود دنت یھی ان ےقوم| ا سکیا ےرہگ ےج مر رت گلاان وا ای ے, نام قائل ذک ہیں شی کین کی یم تصوف ہی اورگکری عیلہ سمالنامہ' الاحمان(اردد)“ بای ہے۔ اس وقت ' ہندوپاک ٹل ارد زہان یسا پا ےکاضفتی مل ووجھی آصوف ے ا وضو پر نا پیر ے انس گے کے اب کک سمات شمارے علا و داْشوران ٘ ےا ول تکی لحاس کر یں ود سک آٹھواں ارہ پرٹنں َْ ا جا واے۔

نوہس سن

زبر دی تمنازع بنا ما جار اے

تم ۔ص رمع رمع مجح مم .حم رج رحیجمرمیج رج رجح جع رج جم رصع رہم رم کم ھجم رھ رحس یمج رجح بجع رمیح رت حر جع رمیح رع مم رمع مجح بح رصع ,صرح رمیحم رحیص میس جع رم رحیس مج رحس مھ رسس سی 77

ظ7

ہہ ح۔ ‏ ہہ ہد ہہ ہہ دہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہش

×ے.ے. یت تر سس ععتہے تے ےت ےے ا ےت ےر

.۰....--.-.٦‏ .۱۷۱2.۰۱ ۰د حا

کہ کہ ہہ کک کک

کاو

:

٠.۰. ---. 7‏ ...۱د ھی ند ےن دادن اد ددےدجے ےجو کہہے

۱-٠.۷... ۰

ج7 8 ۰ 72222۳۷۵2 ا ات خلف امام کے قائل صرف جع اس لیے تھےکہان کے پان حد یشک یہاں انہوں نےقول امام پگ کرنے سے یادہ تقو لی رسول پش لک رن ےکخیا لکیااوری معول اس سلملے می ںآ جکبھی چلا آرہا سے صونی علیم ہوتا سے مفاص رش ربعت پا سک ثاہ ہوٹی ہے وعاجت ے مت یاروعا یکن فک ہنیاد ریمض مال میں مفردہوتے ہیں ا کے پاوچجودمقلددی بہوتے ہیں ۔(الاحسمان گ:۵۰۶٥)‏ مرن اس عمارت سے چیب وخ ری بش لمکا لکرخانقاہ عار فیا بدنا مرن ےکی اکا مکوشن لکرتے ہی ںکہ ىہ متقلدی نکی تو بین ہے ائ مکی گستافی ہے غیرد وفی رد جن ےکس ںکوکی لینا ایس سے بی یباتک سی سے تع 7ار نس ان تا ہم بہت سے سادولوں جو صور تعا لے واتنف ہونا جا ہیں ان کے لیے چند با ہیں ضورع ت کر نا چاڑیں کے ہے سس سیت ا۔م لیف رت خلفِ اما مکیا ہے؟ اراس کے اکا مکیا ہاں؟ ۴۔ اس سک کا خا ناد عارفیر ےکا اق ے؟ دا لکاج اب 0 ات غلف اما مکا مطلب ہہ ےکم نمی امام کے جم سور

فا تک حلاوت/ن۔ ںا

ہہ تہ ہہ ہد ہہ ہہ ہہ ہہ ہک ہہ ہہ کہہے ہش ےحہحش شش شش شر

ح ات تس ےر ےے ے ٣شت‏ ہت

ہہ ہک ہد ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہک ح ‏ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہر ہہ ج ہر ڈگ

ات ہج کہ رح رہ ہہ ہہ ۔ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ دہ ہہ دہ ہہ ہز ہہ ہہ ںی ہہ ڈگ

ز۳

لی مل ہائحمہار بد کے ما بی لف فیرے۔ ۱

لالہ اور حابلہ کے نزدیک مقندی کے لیے ق رآم کر ناجائ سے واج یں وا ہج ری نماز ہو یاسری-

٭غرخغ کےنز کیک ری ہو یاجمرکی سور فا تک ظلادت اجب ے-

فکااس مک بیس اختلاف ہے۔ اکٹ احناف کے نز دی کم بی ےک فندکی کے لیتق رآ تک نا جائنجیں۔

0 عم اوراما مجر سے اس سلللے میس دواقوال بہیں۔ یی ےٹول کے مطالاشظش متناز یکا سور فا2 پڑعنانرواجب ےشست -اور دم ول کے ا 1 ج- 7 ھی + امطاق نمازوں میں سور فاتہ پڑھناواجب سے شمی ا وق مضمون ان شا ءالیڈرگڑبھی۔

ییہاں دوفرلٹی ہہوئۓ ایک پڑ ھن ےش حکمرنے وانے اوردوسرے پڑھناواج بن وانے-

فقاو لی دنیل

ہولوک سورہ فاخمہ پڑ ھن سے کرت نہیں ا کا کنا ری ےک جب قمرآن پڑھاجا تو سںکوفورسے سزناواجب ے۔ اڈ دتعال یکا ارشادے :

أرخاقاد اریہ راع اشات

5

جک ۔ دہ ہہ ہہ رر ہہ ہک ہہ رہ ہہ رہ ہہ ہہ ہہ ہگ ہہ ہہ ہج تک کے ےت ٣‏ ےت تع ہر

ہک ہگ

٦.‏ 7 7 ضس 2 ہے 2 ہے ووارظ وَاٰذًا قُرۃ الْقَرَآن فَاسْتَیعُوأ لَهُ وَأَنصِٹُوأً لَعَلکۂ

رر تُرَعَتویَ(۶۱۱اف+204:7) ںا

رہم رح تم روس ہلجم دع روم رح رج رچچم رجح رءیج مجح جج رج حم رمع رح ریس رم ھ وص زم وص یی رح یسب رکم رھت وحع میحر میحح رع مم رحح سم بح سکع دص رص رمیم حیص میس رجع حم رحوج مج رحس مع ری سی 7

٠2۱.۱۰.۰٠.۰۰... ٦‏ ج1 ٠أ‏ :ظ۳ یر جج دض درد جھ داد ےد جس ےدأددکوااداجچوودےددأ چو ہہک ۔۔ ۔ ‏ ہہ ۔ دہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہج ح ‏ ہہ ہہ ہہ ہہ ہہ ہد ہہ ژہ ر ٤‏ ہہ ح ۔ ہگ

- ۱ ٥تت‏ ہت کل ٠‏ اق ط 7 0 ۰ اکر چوس اور نے فراع رجا جا ۓ لوت لو سے تا ٢ر3‏

اورخاممو در اکر وت اکم رات مکیاجائے۔

اورعر یث بُل ے: من کان لہ امام فقر ائۃالامام لف رأة (سلن ان ماج ) تر جمہ :اما مکی قرات مقند یک یق رآت ے۔

لپزا جب اما ق رآ تکردہا ہووثرآن کے ممطائئی آں وفنت خا موی انم ہےءسا دی اما مکی ق رآ ت نی کے لییےکاکی سے۔

فرق خان یی یل

فا واج ب نے وا لے اکنا ےبرح بیث میں ے :

من صلی صلوةلمیقرافیھابامالقرآنفھی خداجٹلاٹا غیرقام ( جج ,149:1)

نے ایی نمازی۔ڑی جس میس ا شہ یی ذدغماز :نس ہے تن بارفم یھ ئیں۔ انداچا امام کے تی پڑت پا تا سور ة فاتجہ پڑھنالا زی ے۔

عو شا کارتف

رر صوفیک رام فقیہ